افغان ’جنگجوؤں‘ کی لاشیں پاکستان منتقل ہونے کا انکشاف

اتوار 22 نومبر, 2015

پشاور(ویب نیوز) افغانستان کے سرحدے علاقے میں ڈرون حملے کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے مبینہ جنگجوں کی لاشیں پاکستان کے علاقے مالاکنڈ لائے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔
اپردیر سے آنے والی رپورٹس کے مطابق افغانستان کے سرحدی علاقوں سے پاکستان کے شمالی ضلع میں آخری رسومات کے لیے 9 لاشیں لائی گئی ہیں۔
رپورٹس میں کہا جارہا ہے کہ گذشتہ دنوں افغانستان کے صوبہ خوست کے علاقے ببرک تھانہ میں موجود جنگجوں کے بیس کیمپ پر ہونے والے ڈرون حملے میں 21 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔
تاہم ان میں سے صرف 9 ہی لاشیں پاکستان کے سرحدی علاقے میں لائی گئی ہیں۔
رپورٹس میں مزید کہا گیا ہے کہ مذکورہ ڈرون حملے میں ہلاک ہونے والے 7 جنگجوں کا تعلق لوئر دیر کے مخلتف دیہاتوں سے ہے، 5 کا تعلق اپردیر اور 9 کا تعلق صوات اور مالاکنڈ کے دیگرحصوں سے ہے۔
ہلاک ہونے والے ان جنگجوں کی شناخت کے حوالے سے تفصیلات نہیں مل سکیں ہیں۔
مقامی افراد کا کہنا ہے کہ اس سے قبل افغانستان میں ہلاک ہونے والے جنگجوں کی لاشیں ایک یا دو کی تعداد میں لائی جاتی تھیں تاہم یہ پہلی بار ہے کہ اتنی بڑی تعداد میں لاشیں لائی گئی ہیں۔
واضح رہے کہ پاکستان کا اپردیر کا علاقہ افغانستان کے سرحدی صوبے کنٹر سے منسلک ہے۔

image_pdfimage_print

[whatsapp] خبریں. RSS 2.0