بلوچستان کی دفاع اور اسے حاصل کرنا ہماری اولین ترجیح ہے، جیش العدل

منگل 8 ستمبر, 2015

 کوئٹہ ( ہمگام نیوز)  جیش العدل نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہے ہمارے تنظیم کے نام پر بہت سے لوگ منفی پروپگنڈہ پهیلا رہے ہیں ہم وضاحت کرنا ضروری سمجھتے ہے کہ جیش العدل کا مشرقی بلوچستان میں کسی بھی تنظیم یا گروہ سے کوئی تعلق نہیں ہے ایک زمہ دار بلوچ میڈیا کی جانب سے ہمارے تنظیم کو دہشتگرد ثابت کرنا اور دشمن کے پیدا کردہ دہشتگرد گروہوں سے منسلک کرنا ایک غیر اخلاقی فعل ہے بلوچ قومی میڈیا کی زمہ داری بنتی ہے کہ وہ سب سے پہلے کسی بھی تنظیم کے متعلق اگر بیان جاری کرتا ہے توسب سے پہلے اسکی مصدقہ ذرائع سے تصدیق کرنے کے بعد اس قسم خبر جاری کریں اس طرح کا خبر جاری کرنا ہم سجھتے ہیں کہ دشمن کا کام آسان کرنا ہے بلوچ میڈیا کی حیثیت کو ہم آزادی پسند تنظیم کی حیثیت سمجھتے ہیں وہ تحریک کے اہم حصے ہیں مگر اس طرح کا غیر زمہ دارانہ حرکت ہمارے اور بلوچ تحریک کے لیے نہایت نقصان دہ عمل ہے لہذا ہم تمام میڈیا گروپ سے گزارش کرتے ہیں غور و تحقیق کرنے کی بعد اخبار جاری کریں. دشمن عرصہ دراز سے مختلف زریوں سے منفی پروپیگنڈہ کرتا آرہا ہے بلوچ قوم کو یہ معلوم ہونا چائیے اور دشمن کے ہر حربے کو ناکام بنانا چائیے دشمن جان چُکا ہے کہ بلوچ قوم کو مزاحمت سے شکست نہیں دیا جاسکتا اس لیے مختلف حربوں نفسیاتی محاذ بلوچ جدوجہد کے خلاف آغاز کرچکا ہے آئے روز بلوچ فرزندوں کو اغوا کرنا گھروں کو مُسمار کرنا مسجدوں کو شہید کرنا ہمارے دانشور ، ادیب ، علما کرام کو تختہ دار پر لٹکا دینا ، شھید کرنا چادر چاردیواریوں کی تقدس کو پامال کرنا معمول بن چُکا ہے بلوچ سرزمین کی وسائل کو لوٹ کھسوٹ کرنا بجائے ان خبروں کو اپنے اخبار میں شایہ کرے مگر ہمارے عزیز دوست اپنے ہی بلوچ قوم کی تنظیم پر بغیر تحقیق ایسے منفی الفاظ اپنے اخبار کی زینت کررہے ہیں جو بلکل جهوٹ پر مبنی ہے اگر دشمن کے اخبار ایسے منفی پروپیگنڈے کرتے ہیں تو کوئی نئی بات نہیں مگر اپنے ہی اس طرح کے پروپیگنڈے شائع کریں تو بالکل یہ تحریک کے لیے نیک شگون نہیں ہے اور اگر ہمارا کسی بھی کارکن دشمن کے صفوں میں پایا گیا ہمیں علم نہ ہوا اور قوم کو معلوم ہے تو ضرور ہمیں آگاہ کریں ہم تنظیمی آئین کے مطابق کارکن کو بلوچ قومی عدالت بھی پیش کرکے سخت سزا دینگے اور ہم بلوچ قوم کو یہ یقین دلانا چاہتے ہیں جیش العدل کا ہر جنگجو سر کٹا سکتا ہے لیکن اپنے بلوچ شُہداء کے خون کا سودا کھبی نہیں کرسکتا جیش العدل  نظریات کا پابند ہے ہماری پالیسی بلوچستان کو حاصل کرنا ، بلوچ سرزمین کا دفاع کرنا ہے اس سے ایک قدم بھی کم نہیں یہ حقیقت ہے کے ہمارا طریقہ کار مشرقی بلوچستان دوستوں کے سے مختلف ہے مگر منزل ایک ہے
image_pdfimage_print

[whatsapp] خبریں. RSS 2.0