پاکستانی خفیہ اداروں کا بلوچ لاپتہ افراد کے لواحقین کے زخموں پہ نمک پاشی

اتوار 26 اکتوبر, 2014

خضدار(ہمگام نیوز)  اطلاعات کے مطابق کل  کسی نامعلوم شخص نے خضدار کے لاپتہ افراد کے لواحقین کو فون کرکے اطلاع دیا تھا کہ اُنکے پیاروں کو ہم نے قتل کرکے فیروز آباد کے علاقے میں ایک کنویں میں پھینک دیا ہے جا کہ لاشیں اٹھا لیں۔ لاپتہ افراد کے لواحقین نے مزکورہ جگہ جاکر تلاشی کی لیکن اُنھیں کچھ حاصل نہیں ہوا اور وہ واپس آگئے اور رات مزکورہ شخص نے دوبارہ فون کرکے بتایا کہ لاشیں وہاں پڑے ہوئے ہیں جاکر اپنے لوگوں کو شناخت کریں اس متعلق لاپتہ افراد کے لواحقین نے ڈی سی خضدار سمیت ضلعی انتظامیہ سے رابطہ کرکے انھیں اس متعلق آگاہ کیا ۔آج لواحقین دوبارہ وہاں جارہے تھے لیکن ڈی سی خضدار نے اُنھیں وہاں جانے سے روک لیا ۔ لاپتہ افراد کے لواحقین شدید غم و کرب کا شکارہیں اور ان حالات میں انکے زخموں پہ مزید نمک پاشی کیا جا رہا ہے۔

اطلاعات کے مطابق خضدار سے لاپتہ ہونے والے تین بلوچ فرزندوں کے خآندان والوں کو کال کرکے لاشوں کے متعلق بتایا گیا تھا جن میں لاپتہ غٖفار بلوچ ولاپتہ سعداللہ بلوچ اور دیگر اسیران کے خاندان والے شامل ہیں۔خدشہ ہے کہ اگر ان فون کالز میں سچائی ہے تو فیروزآباد کے علاقے میں اجتماعی قبریں ہوسکتی ہیں کیونکہ اس علاقےسے پچھلے پانچھ سالوں سے سینکڑوں مسخ لاشیں ملی ہیں اور پچھلے ایک ہفتے میں دو لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔۔

image_pdfimage_print

[whatsapp] خبریں. RSS 2.0